15

ایک دُکھ تو اُٹھا نہيں پائے تم مرا بوجھ کیا اُٹھاؤ گے

Spread the love

کچھ شعر بھی…..
ایک دُکھ تو اُٹھا نہيں پائے
تم مرا بوجھ کیا اُٹھاؤ گے
دیکھ لو سامنے بھی دریا ہے
جھوٹ بولا تو ڈوب جاؤ گے
تم بہت مُسکرا کے ملتے ہو
تم یقیناً مجھے رُلاؤ گے!!!!
عمران عامی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں